وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سید شبلی فراز نے سی پی این ای کے زیر اہتمام “میٹ دی ایڈیٹرز” پروگرام میں اخبارات و جرائد کے مدیران سے ملاقات کی

0
99

پریس ریلیز
تاریخ: 08 اکتوبر 2020ء

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سید شبلی فراز نے سی پی این ای کے زیر اہتمام “میٹ دی ایڈیٹرز” پروگرام میں اخبارات و جرائد کے مدیران سے ملاقات کی

کراچی( ) پی ٹی آئی حکومت آزادی صحافت پر گہرا یقین رکھتی ہے اور اس ضمن میں ہر قسم کے ممکن تعاون کی پیشکش کرتے ہیں۔ وفاقی حکومت کے اشتہارات کے واجبات کی فوری ادائیگیوں کے سلسلے میں سی پی این ای سمیت دیگر میڈیا تنظیموں سے بھرپور مشاورت کے بعد جلد ہی جامع لائحہ عمل تیار کیا جائے گا تاہم میڈیا کے پچھلے بقایاجات کی ادائیگیاں شروع کر دی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سید شبلی فراز نے کونسل آف پاکستان نیوزپیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) کے زیر اہتمام “میٹ دی ایڈیٹرز” پروگرام میں اخبارات و جرائد کے مدیران سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے میڈیا کے واجبات کی فوری ادائیگیوں سمیت دیگر مسائل کرنے کا حکم دیا ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کی جانب سے حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ حکومت عوام کو تمام صورتحال سے آگاہ کرتی رہے گی۔ حکومت کی معاشی پالیسی درست سمت پر ہے، ملکی زرمبادلہ بہتر ہوا ہے اور معاشی سرگرمیاں شروع ہو گئی ہیں۔

انہوں نے کراچی پیکیج سے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت سے زیادہ سندھ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ کراچی کی ترقی و خوشحالی پر توجہ دے۔ وفاقی حکومت کراچی سمیت سندھ بھر کے مسائل کا خاتمہ چاہتی ہے۔ قبل ازیں سی پی این ای کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر جبار خٹک نے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سید شبلی فراز کا خیرمقدم کرتے ہوئے سرکاری اشتہارات کے واجبات کی میڈیا اداروں کو براہ راست ادائیگیوں کے اقدام اورجاری اشتہارات کی فہرست ویب سائیٹ پر آویزاں کرنے پر شکریہ ادا کیا۔

ڈاکٹر جبار خٹک نے میڈیا کو درپیش مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں میڈیا غیر مرئی دباؤ کا شکار ہے۔ اشتہارات کی غیر منصفانہ تقسیم اور واجبات کی ادائیگیوں میں غیرضروری تاخیر سے میڈیا ادارے معاشی ابتری کا شکار ہیں۔ سی پی این ای نے میڈیا سے متعلق کئی امور پر وفاقی حکومت کو تجاویز دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مقامی اور علاقائی اخبارات کے لئے زمینی حقائق کے مطابق قانون سازی اور فیصلہ سازی کی جائے۔ انہوں نے سرکاری اشتہارات کی تقسیم کو شفاف بنانے اور چھوٹے درمیانے علاقائی اور مقامی اخبارات و جرائد کو مختص کوٹہ کے مطابق اشتہارات دینے پر زور دیتے ہوئے مطالبہ کیا کہ اخباری صنعت کے لئے ریلیف پیکیج ، اشتہارات کے نرخوں میں اضافہ سمیت واجبات کی بروقت ادائیگیوں، اخبارات کو اے بی سی سے متعلق درپیش مسائل حل کرنے کے لئے ون ونڈو آپریشن پر مبنی ٹھوس اقدامات کئے جائیں۔

تقریب میں سی پی این ای کے نائب صدور اکرام سہگل، انور ساجدی، سابق سیکریٹری جنرل اعجازالحق، ڈپٹی سیکریٹری جنرل عامر محمود، فنانس سیکریٹری حامد حسین عابدی، انفارمیشن سیکریٹری عبدالرحمان منگریو، سینئر اراکین طاہر نجمی، سعید خاور، مقصود یوسفی، فقیر منٹھار منگریو، محمد طاہر، احمد اقبال بلوچ، شیر محمد کھاوڑ، محمد یونس مہر ، عبدالخالق علی، محمود عالم خالد، بشیر احمد میمن، کاشف حسین میمن، مدثر عالم، عثمان ساٹی، عبدالقیوم خان، رفیق احمد پیرزادہ، سلمان قریشی، سید محمد رضا شاہ، رفاقت تنولی، صحبت برڑو، ناصر خٹک، عامر خٹک، سدرہ کنول اور بلقیس جہاں سمیت بڑی تعداد میں صحافیوں و دیگر میڈیا کارکنوں نے شرکت کی۔ تقریب کے اختتام پر وفاقی وزیر کو سی پی این ای کی یادگاری شیلڈ اور اجرک کا تحفہ پیش کیا گیا۔

جاری کردہ: کونسل آف پاکستان نیوزپیپر ایڈیٹرز۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here