اخباری اداروں کے واجبات پر سندھ ہائی کورٹ نے حکومت سندھ کو 10 ستمبر تک جواب داخل کرنے کی مہلت دے دی

0
922

پریس ریلیز

24 اگست 2020ء

اخباری اداروں کے واجبات پر سندھ ہائی کورٹ نے حکومت سندھ کو 10 ستمبر تک جواب داخل کرنے کی مہلت دے دی

اخباری ادارے جنوری 2019ء سے واجبات کی عدم ادائیگیوں کے باعث شدید معاشی بحران کا شکار ہیں’ سی پی این ای

کراچی (پ ر) کونسل آف پاکستان نیوزپیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) کی جانب سے سندھ حکومت کے ذمہ اخبارات کے واجبات کی عدم ادائیگی پر دائر رٹ پیٹیشن کی سماعت کے دوران سندھ ہائی کورٹ نے محکمہ اطلاعات سندھ کو 10 ستمبر 2020ء تک جواب داخل کرانے کی مہلت دیدی۔ سی پی این ای کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر جبار خٹک موقف اختیار کیا کہ اخبارات و جرائد کو جنوری 2019ء سے جون 2020ء تک کے 34 کروڑ کے واجبات کی ادائیگی نہیں کی گئی ہے، جس کے باعث اخباری ادارے شدید معاشی بحران کا شکار ہیں اور اخباری اداروں کے صحافی اور دیگر کارکن بھی شدید مالی پریشانیوں کا شکار ہیں۔ درخواست گزار کے وکلاء نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ محکمہ اطلاعات سندھ کو پابند کیا جاٸے کہ وہ اخبارات و جرائد کے واجبات فوری طور پر ادا کرے تاکہ اخباری اداروں سمیت صحافی اور دیگر کارکنان معاشی پریشانیوں سے بچ سکیں۔ اس موقع پر محکمہ اطلاعات سندھ کی جانب سے استدعا کی گئی کہ ہمیں جواب جمع کرنے کے لئے مہلت دی جائے جس پر سندھ ہائی کورٹ کے جسٹس محمد علی مظہر اورجسٹس سید یوسف علی کی عدالت نے 10 ستمبر تک جواب داخل کرنے کی مہلت دیتے ہوئے سماعت 10 ستمبر تک ملتوی کر دی۔ سی پی این ای کی پیروی سید محمد جمیل رضا زیدی اور محمد اظہر فریدی ایڈووکیٹس نے کی، اس موقع پر سی پی این ای کے جنرل سیکریٹری ڈاکٹر جبارخٹک بھی موجود تھے۔ دریں اثناء سندھ حکومت کے خلاف توہین عدالت کی سماعت بھی 24 ستمبر کو ہوگی۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here