سی پی این ای نے انتہائی متنازعہ ، امتیازی اور میڈیا مخالف پاکستان پی ایم ڈی اے کے قیام کی تجویز کو مسترد کر دیا

0
1009

پریس ریلیز
تاریخ: 11 اگست 2021ئ

کراچی (پ ر) کونسل آف پاکستان نیوزپیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای) نے انتہائی متنازعہ ، امتیازی اور میڈیا مخالف پاکستان میڈیا ڈویلپمنٹ اتھارٹی (پی ایم ڈی اے) کے قیام کی تجویز کو مسترد کرتے ہوئے اسے ”پاکستان میڈیا ڈسٹرکشن اتھارٹی” قرار دیاہے۔ جاری کردہ ایک پریس ریلیز میں سی پی این ای کے عہدیداروں نے وفاقی حکومت کی جانب سے تیار کردہ مجوزہ ”پی ایم ڈی اے” کے قیام کے مسودے کوریگولیشنز کے نام پر میڈیا کو غیر ضروری طور پر کنٹرول کرنے کی ہر کوشش کی بھرپور مخالفت کرے گی۔ ون ونڈو پالیسی اور ریگولیشن کے نام پر آئین پاکستان کی بنیادی شقوں سے متصادم اور آزادی صحافت اور اظہار رائے کو کچلنے سمیت میڈیا کے تمام اداروں پر انتہائی مرکزیت پر مبنی سخت گیر ریاستی کنٹرول نافذ کرنے کی مذموم سازش ہے جس کے ملکی میڈیا اور صحافیوں پر تباہ کن اثرات مرتب ہوں گے۔ سی پی این ای کے رہنماؤں نے مجوزہ ”پی ایم ڈی اے” کے مسودہ میں ٹریبونل کے قیام اور صحافتی پیشہ ورانہ ذمہ داریوں کی ادائیگوں کے ضمن میں صحافیوں کو سزائیں دینے سے متعلق ظالمانہ شقوں کی شدید مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پرنٹ میڈیا کے لئے مروجہ پریس کونسل آف پاکستان (PCP) کے قوانین ، الیکٹرانک میڈیا کے لئے پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (PEMRA) اور سوشل میڈیا کے لئے سائبر کرائم کا ادارہ بھی موجود جس کے تحت صحافیوں کی گرفتاریاں بھی کی جا رہی ہیں تاہم سوشل میڈیا میں بہتری کے لئے PTA کے قوانین کے بعض حصوں میں ترامیم کی جا سکتی ہیں کیونکہ پرنٹ، الیکٹرانک اور سوشل میڈیا ایک دوسرے سے منفرد اور علیحدہ ذریعہ ابلاغ (جن کی اپنی شناخت اور ریگولیٹری قوانین ہیں) کی حقیقت اور زمینی حقائق کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتااور مروجہ قوانین کے ہوتے ہوئے کسی نئی قانون سازی کی کوئی ضرورت نہیں۔میڈیا کے جدید دور میں ون ونڈو پالیسی کے تحت جابرانہ طور پر تمام میڈیا کو ایک ہی لاٹھی سے ہانکنے کی جمہوری منتخب دور میں کوئی گنجائش نہیں ہے۔

جاری کردہ: کونسل آف پاکستان نیوزپیپر ایڈیٹرز۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here